تازہ ترین
بھارت کے دہشتگرد تنظیموں کیساتھ روابط کا انکشاف: امریکی جریدہ
  10  اکتوبر‬‮  2020     |     دہشت گردی
امریکی جریدے” فارن پالیسی “ نے دہشتگردی کے حوالے سے تہلکہ خیز انکشافات کرتے ہوئے بھارت دہشتگردی کا چہرہ پورنی دنیا کے سامنے بے نقاب کر دیا ہے ۔جریدے فارن پالیسی نے اپنی رپورٹ میں کہاہے کہ مختلف ممالک میں دہشتگرد حملوں میں بھارتی سرپرستی نیا موڑ لے رہی ہے، بھارتی دہشتگردگروپوں کی سرپرستی کے بھارت، پاکستان، افغانستان میں نیٹ ورکس سے روابط کے ثبوت ہیں،بھارتی دہشتگردوں نے افغانستان اورشام کوبیس بناکردہشتگردانہ کارروائیوں میں حصہ لیا۔رپورٹ میں انکشاف کیا گیاہے کہ کابل میں سکھ گردوارہ پرحملے میں بھارتی دہشت گرد ملوث ہیں اورداعش نے بھارت میں موجود اپنے دہشتگرد گروپس کا باضابطہ اعلان بھی کیا تھا ،داعش کا یہی گروپ کشمیر میں بھی ملوث ہے، اقوام متحدہ بھی کیرالہ اور کرناٹکا میں دہشتگرد گروپس کی موجودگی کا انکشاف کر چکا ہے ، ایک ہندو کے 9/11 واقعہ کے خالد شیخ محمد سے روابط کا بھی انکشاف ہوا ہے ۔فارن پالیسی کا کہناتھا کہ بھارت میں مودی نے ہندو نیشنلزم کو فروغ دیا ہے ،ہندو نیشنلزم انتہا پسندی کو فروغ دے رہا ہے، علاقائی اورعالمی دہشتگرد کارروائیوں میں زیادہ تربھارتی ملوث ہے۔امریکی جریدے فارن پالیسی نے بھارت دہشتگردی کو بے نقاب کرتے ہوئے داعش اور بھارتی گٹھ جوڑ کو عالمی اور علاقائی خطرہ قرار دیاہے ۔رپورٹ میں کہا گیاہے کہ بھارتی دہشتگردی کی کہانی تاریخی طور پر دنیا سے اوجھل رہی ، بھارت کی انتہا پسند پالیسی تباہ کن خطرہ ہے ، اس کا اگر نوٹس نہ لیا گیا تو دو روس اثرات ہوں گے ،یہ خطرہ اگست کے اوئل میں جلالہ آباد کی جیل پر ہونے والے داعش کے حملے کے بعد ابھر کر سامنے آیا ،اس حملے نے ایسے جذبے کا مظاہرہ کیا جس نے اس گروہ کو دولت اسلامیہ کے دوسرے بہت سے علاقائی وابستہ افراد سے جدا کر دیا ۔رپورٹ میں کہا گیاہے کہ مختلف ممالک میں دہشتگرد حملوں میں بھارتی سرپرستی نیا موڑ لے رہی ہے ، بھارت داعش گٹھ جوڑ کی کارروائیوں میں سری لنکا میں ایسٹر پر کیے جانے والے بم دھماکے میں بھی شامل ہیں جبکہ 2017 میں نئے سال کے موقع پر ترکی کلب پر حملے میں بھی داعش اور بھارتی گٹھ جوڑ کا ہاتھا تھا ۔ اس کے علاوہ 2017 میں نیو یارک اور سٹاک ہوم حملے نے دنیا کو ششدر کر دیا ۔فارن پالیسی کا اپنی رپورٹ میں کہناتھا کہ ان حملوں کی پلاننگ میں بھارتی ہاتھ انتہائی پریشان کن ہے، بھارت کا دہشتگردی میں ملوث ہوناکوئی نئی بات نہیں، بھارت دراصل طالبان کے نظریات کوفروغ دینے میں ایک جڑاوربنیادکی حیثیت رکھتاہے کشمیرمیں بھی بھارت میں موجودانہی عناصرنے کرداراداکیا ۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ بھارتی دہشتگردگروپوں کی سرپرستی کے بھارت، پاکستان، افغانستان میں نیٹ ورکس سے روابط کے ثبوت ہیں، پہلے بھارت صرف خطے میں ہی دہشتگرد کارروائیوں میں ملوث رہااور داعش کے ذریعے مذہبی گروہوں خصوصاًنوجوانوں کواستعمال کررہاہے، بھارت داعش ،عالمی مذہبی تحاریک کے ذریعے انتہاپسندی پھیلارہاہے۔فارن پالیسی کا کہناتھا کہ بھارت داعش کے ذریعے دیگرممالک میں دہشتگردنظریات کو فروغ دے رہاہے، بھارتی دہشتگردوں کے شام کی لڑائی میںملوث ہونے اور افغانستان میں داعش سے ملکرلڑنے کے پختہ ثبوت ملے ہیں ، داعش اور بھارتی گٹھ جوڑ کے نتیجے میں دہشتگردی میں اضافہ ہوا، بھارتی دہشتگردوں نے افغانستان اورشام کوبیس بناکردہشتگردانہ کارروائیوں میں حصہ لیا۔

 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں

رابطہ کریں
   
(92) 51 2873311-12
   
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔