تازہ ترین
قومی اسمبلی نے انسداد دہشتگردی کے تیسرے ترمیمی بل مجریہ2020 کی منظوری دے دی
  16  ستمبر‬‮  2020     |     پاک دفاع
ایوان نے انسداد دہشت گردی کے تیسرے ترمیمی بل2020 کی منظوری دے دی۔یہ بل فہیم خان کی جانب سے پیش کیا گیا' جس کا مقصددہشت گردی میں مالی معاونت کی روک تھام کرناہے۔ فوجداری قانون کا ترمیمی بل2020 بھی ایوان میں پیش کیا گیا' یہ بل امجد علی خان کی جانب سے پیش کیا گیا جس میں پاکستان کی مسلح افواج یا اس کے کسی اہلکار کی دانستہ طور پر تضحیک یا بدنام کرنے پر سزا دینے کے لئے پاکستان پینل کوڈ اور ضابطہ فوجداری میں ترامیم کی تجاویز دی گئی ہیں۔ایسے جرم کے مرتکب شخص کو دو سال کی قید یا پانچ لاکھ روپے جرمانہ کیا جاسکے گا۔اس ترمیم کا مقصد مسلح افواج کے خلاف نفرت اور عدم احترام کے رویوں کو روکنا ہے۔قومی اسمبلی کو آج بتایا گیا کہ ناگہانی آفات سے نمٹنے کا ادارہ ملک بھر میں بارشوں سے متاثرہ علاقوں میں ریلیف اور امدادی کارروائیاں کررہا ہے۔ایک توجہ دلائو نوٹس کا جواب دیتے ہوئے پارلیمانی امور کے مشیر ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ سردست این ڈی ایم اے کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل ماہرین کی ٹیموں کے ساتھ ریلیف کوششوں کی نگرانی کے لئے سندھ کے دورے پر ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بھرمیں بارشوں سے متاثرہ لوگوں میں خوراک کے تھیلے اور خیمے تقسیم کر دیئے گئے ہیں۔بعد ازاں ایوان نے لاہور سیالکوٹ موٹروے پر خاتون سے زیادتی کے افسوسناک واقعہ سے پیدا ہونے والی صورتحال پر بحث کو دوبارہ شروع کیا۔بحث میں حصہ لیتے ہوئے وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد حسین چوہدری نے پاکستان میں عدالتی نظام میں اصلاحات لانے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ ریپ کیسز میں سزائوں کی شرح بڑھے اور معاشرے میں اس طرح کے غیر انسانی واقعات کا سدباب ہو۔بے حرمتی کا شکار خواتین کیلئے خاتون تفتیشی افسر مقرر کی جانی چاہیے۔

 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں

رابطہ کریں
   
(92) 51 2873311-12
   
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔