تازہ ترین
ٹوئٹر نے خاموشی سے لاکھوں اکاونٹس بند کردیے
  29  اپریل‬‮  2020     |     سائیبر سکیورٹی
سماجی رابطوں کی مقبول مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر نے ٹوئٹر ایس ایم ایس سروس بند رکھتے ہوئے خاموشی سے لاکھوں اکاونٹس بند کردیے۔ٹوئٹر کمپنی نے اپنے ٹوئٹر سپورٹ پیج سے گزشتہ برس ستمبر میں اعلان کیا تھا کہ صرف چند مقامات کے علاوہ پوری دنیا میں ٹوئٹر ایس ایم ایس سروس یعنی موبائل پیغامات سے ٹوئٹ کرنا بند کردیے گئے ہیں۔اسی ضمن میں ٹوئٹر نے گزشتہ روز یعنی 6 ماہ بعد ایک اور ٹوئٹ شیئرکی جس میں بتایا گیا کہ صارفین کے اکاونٹس کی حفاظت کے لیے اس عمل کو ہم جاری رکھنا چاہتے ہیں۔کمپنی کے مطابق یہ دیکھا گیا ہے کہ ایس ایم ایس کے ذریعے ٹوئٹر اکاونٹس پرحملہ ہونے کا خطرہ ہے یہی وجہ ہے کہ ٹوئٹر شیئر ایس ایم ایس سروس پر پابندی برقرار رکھی ہے۔اگرچہ ٹوئٹر ایس ایم ایس سروس بند کردی گئی ہے لیکن اس دوران صارفین کو اہم پیغامات جیسے اکاونٹ لاگ ان اور انہیں مینیج کرنے والے پیغامات تک رسائی ہوگی۔یاد رہے کہ ٹوئٹر کی جانب سے یہ قدم اس وقت اٹھایا گیا تھا جب گزشتہ برس ٹوئٹر کے شریک بانی اور چیف ایگزیکٹو آفیسر ((سی ای او) جیک ڈورسی کا اکاونٹ ہیک کیا گیا تھا تاہم پیغامات کی سروس میں تبدیلی کے حوالے سے ٹوئٹر نے اپنے شراکت داروں کو آگاہ کردیا تھا۔ماضی میں دیکھا جائے تو جب ٹوئٹر کی ایس ایم ایس سروس عروج پر تھی تو متعدد صارفین اس کے ذریعے ٹوئٹ شیئر بھی کرتے تھے، اکاونٹ بھی بناتے تھے اور اکاونٹس بھی فالو کر لیا کرتے تھے۔پیغامات کی سروس میں تبدیلی کے ساتھ ٹوئٹر نے خاموشی سے اب ان لاکھوں اکانٹس کو بند کردیا ہے جو مذکورہ سروس کے تحت بنائے گئے تھے۔اس سے متعلق ٹوئٹر ترجمان نے بتایا کہ ٹوئٹر ایس ایم ایس سروس سے بنائے گئے اکاونٹس کو اس لیے ڈیلیٹ کیا گیا ہے کیونکہ ان کی تفصیلات دستیاب نہیں تھی جیسے فون نمبر، یا ای میل ایڈریس وغیرہ۔ٹوئٹر ترجمان کا کہنا تھا کہ ان اکاونٹس کو ڈیلیٹ کیا گیا ہے جن سے خطرہ لاحق ہے اور اب وہ ٹیکنالوجی کو سپورٹ نہیں کرتے ہیں البتہ اس کے نتیجے میں کچھ اکاونٹس کے فالوورز کم ہوسکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ لوگوں میں اعتماد ہو کہ ان کے پاس مصدقہ اور فعال اکاونٹس والے فالوورز ہیں اور اس بات یو یقینی بنانے کے لیے ہم اقدامات کرتے رہیں گے


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں