تازہ ترین
حکومت کاکشمیر کی صورتحال پر سفارشات بارے 7 رکنی کمیٹی میں توسیع کا فیصلہ
  10  اگست‬‮  2019     |     پاک دفاع
حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بھارتی اقدامات کا جائزہ لینے اور ان پر سفارشات ترتیب دینے کے لیے بنائی گئی 7 رکنی کمیٹی میں توسیع کا فیصلہ کرلیا۔اپوزیشن بشمول سینیٹرسراج الحق کو شامل ہونے کی دعوت دی جائے گی۔ ایک نجی ٹی کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت جمعہ کو وفاقی کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ حکومتی کمیٹی میں اپوزیشن جماعتوں بشمول جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینیٹر سراج الحق کو بھی شامل ہونے کی دعوت دی جائے گی جبکہ صدر اور وزیراعظم آزاد جموں و کشمیر اور گورنر گلگت بلتستان کو بھی کمیٹی میں شامل کیا جائے گا۔خیال رہے کہ 6 اگست کو وزیراعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر کی حالیہ صورتحال پر قانونی، سیاسی ، سفارتی ردعمل سے متعلق سفارشات تیار کرنے کے لیے ایک 7 رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ کمیٹی وزیرخارجہ، اٹارنی جنرل آف پاکستان، سیکریٹری خارجہ، ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر وزیر اعظم کے نمائندہ خصوصی احمر بلال صوفی اور قومی سلامتی کے اداروں کے سربراہان کو شامل کیا گیاہے۔پہلے مرحلے میں پاکستان نے بھارت کے اس اقدام کو مسترد کرتے ہوئے بھارت کے ساتھ دوطرفہ تجارتی تعلقات معطل اور سفارتی تعلقات محدود کردیے ہیں۔ پاکستان نے یہاں موجود بھارتی ہائی کمشنر کو ملک سے واپس جانے کی ہدایت کرتے ہوئے نامزد ہائی کمشنر کو نئی دہلی بھیجنے سے انکار کردیا ہے۔ بھارت سے ثقافتی تعلقات کی معطلی کا اعلان بھی سامنے آیا ہے جبکہ 14 اگست کو یوم آزادی کو یوم یکجہتی کشمیر کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ساتھ ہی پاکستان نے 15 اگست یعنی بھارت کے یوم آزادی کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کا اعلان کرتے ہوئے قومی پرچم سرنگوں رکھنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیاگیاہے۔علاوہ ازیں پاکستان نے دونوں ممالک کے درمیان چلنے والی سمجھوتہ اور تھر ایکسپریس اور بس سروس کو بھی معطل کرنے کا اعلان کیا گیاہے۔


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں

رابطہ کریں
   
(92) 51 2873311-12
   
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔