تازہ ترین
ایران عراق بارڈر سکیورٹی فورس کے کمانڈروں کا اجلاس
روسی ایس 400 میزائل نظام کی دوسری بیٹری ترکی کے حوالے
شام میں جنگ ختم ہو چکی، صرف کشیدگی کے محاذ باقی رہ گئے ہیں،روسی وزیرخارجہ
طالبان غیرملکی طاقتوں کی بجائے ہم سے براہ راست مذاکرات کریں،افغان حکومت
افغانستان میں بدامنی کا راج، روزانہ 300 سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہو رہے ہیں، حکمت یار
افغانستان میں ریڈ کراس کی سرگرمیاں بحال

یورپی پارلیمنٹ میں آج کشمیر کامعاملہ زیربحث آئے گا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایک نجی ٹی وی چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاہے کہ بین الاقوامی ذرائع ابلاغ نے مقبوضہ کشمیر کے بارے میں بھارتی موقف کو مسترد کردیا ہے۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم اور کرفیو کے خلاف کشمیری دنیا بھر میں سراپا احتجاج ہیں۔
اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کی قرادادوں پر عملدرآمد نہ ہونے کی قیمت کشمیریوں کی نسلیں اپنے خون سے ادا کر رہی ہیں‘سلامتی کونسل کو انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں بشمول جبری گرفتاریاں اور مظاہرین پر پیلٹ گنز کے استعمال کو بھی رکوانا ہوگا اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میںکرفیو ختم کروانے میں کردار ادا کرے. انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے سلامتی قراردادوں کو نظرانداز کرنا ادارے کی ساکھ پر سوالیہ نشان ہے. ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے جنرل اسمبلی میں سلامتی کونسل کی کارکردگی پر مباحثے سے خطاب میں کہا کہ اقوام متحدہ قراردادوں پر عدم عملدر آمد کی قیمت کشمیریوں نے اپنے خون سے ادا کی‘انہوں نے کہا کہ حالیہ بھارتی غیر قانونی اقدام سے کشمیر میں جبر میں اضافہ ہوا ہے. واضح رہے کہ چند روز قبل اقوام متحدہ میں پاکستانی مندوب ملیحہ لودھی نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوترس سے ملاقات کی تھی جس میں مقبوضہ کشمیر پر گفتگو کی گئی‘ ملاقات میں مقبوضہ کشمیر میں بدتر صورتحال سے نمٹنے کے لئے اقدامات کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیا تھا. ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے اقدامات نے سنگین انسانی بحران کو جنم دیا ہے اور وہاں کی صورتحال مسلسل بگڑتی جارہی ہے، کرفیو کے باعث مقبوضہ وادی میں معمولات زندگی مفلوج ہیں، مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاﺅن جاری ہے. ملیحہ لودھی نے سیکرٹری جنرل کو باورکروایا تھا کہ گزشتہ ماہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے غیر قانونی اقدام سے پیدا ہونے والا سنگین سیاسی اور انسانیت سوز بحران بین الاقوامی امن و سلامتی کے لئے خطرہ ہے، بھارت کی جانب سے کشمیر میں جاری مظالم پر پاکستان خاموش نہیں رہے گا کیوں کہ بھارتی اقدامات عالمی اقدامات کی خلاف ورزی ہے. گزشتہ روز سلامتی کونسل میں افغانستان پر مباحثے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستانی مندوب نے کہا تھا کہ مذاکراتی عمل کو لگے حالیہ دھچکے سے امن کی کوششوں میں کمی نہیں آنی چاہیئے. ملیحہ لودھی نے کہا تھا کہ پاکستان نے ہمیشہ کہا کہ افغانستان کا حل فوجی نہیں، مذاکرات ہیں‘ امریکا اور طالبان معاہدے کے قریب پہنچتے دکھائی دے رہے تھے افغانستان میں امن کوششوں میں پاکستان اپنا کردار ادا کرتا رہے گا. اننہوںنے افغان امن عمل کی جلد بحالی پر زوردیا انہوں نے امید ظاہر کی کہ بالاآخر حتمی معاہدے پر اتفاق ہوجائے گا امن مذاکرات کی معطلی وقتی ہے،جلد بحال ہونگے، پاکستان نے ہمیشہ کشیدگی کی مذمت کی اورتمام فریقوں پر ضبط و تحمل سے کام لینے پر زوردیا.
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اقوام متحدہ میں تعینات سفیروں اور مستقل مندوبین سے ملاقات کر کے ان کے ساتھ مقبوضہ کشمیر کی تشویش ناک صورت حال پر تبادلہ خیال کیا۔ تفصیلات کے مطابق شاہ محمود نے انسانی حقوق کونسل کے اجلاس کے سلسلے جنیوا میں موجودگی کے دوران یو این سفیروں اور مستقل مندوبین کو بھارت کے غیر آئینی اقدامات اور ان کے مضمرات سے آگاہ کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت کی جانب سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں عروج پر ہیں، مقبوضہ کشمیر میں یک طرفہ اقدام یو این قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔ وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ کشمیری بھارتی مظالم سے نجات کے لیے عالمی برادری کی طرف دیکھ رہے ہیں، کشمیریوں کو بھارتی بربریت سے بچانے کے لیے دنیا کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے جنیوا میں جاری انسانی حقوق کونسل کے اجلاس کے موقع پر ڈائریکٹر جنرل عالمی ادارہ صحت ڈاکٹر ٹیڈروس سے ملاقات کی اور مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو کے سبب انسانی جانوں کو درپیش شدید خطرات کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت لاکھوں نہتے کشمیریوں کی زندگیاں بچانے کیلئے فوری اقدامات کرے، مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورتحال ایک نئے انسانی المیے کے رونما ہونے کی نشاندہی کر رہی ہے، طبی عملے کو حاملہ خواتین، بچوں اور بوڑھوں کو طبی سہولیات فراہم کرنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے، صورتحال اس قدر تشویشناک ہے کہ خوراک اور ادویات تک میسر نہیں ہو رہیں۔ شاہ محمود نے جنیوا میں سینیگال کے وزیر خارجہ احمدوبا اور او آئی سی ممالک کے سفیروں سے بھی ملاقات کی اور انہیں بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں اٹھائے گئے یکطرفہ اقدامات اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں سے آگاہ کیا۔ سینیگال کے وزیر خارجہ احمدوبا نے صورتحال پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ ساری صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت نے 5 اگست سے لیکر آج تک مقبوضہ جموں و کشمیر کے لاکھوں نہتے انسانوں مسلسل کرفیو لگا کر محصور کر رکھا ہے، مقبوضہ جموں و کشمیر کے نہتے انسانوں کو بھارتی بربریت سے نجات دلانے کے لیے عالمی برادری کو آگے آنا ہوگا۔ قبل ازیں، وزیر خارجہ شاہ محمود نے تنظیم تعاون اسلامی (او آئی سی) گروپ کے سفرا سے بھی ملاقات کی، انھوں نے کہا کہ بھارت نے اب تک نہتے کشمیریوں کو کرفیو لگا کر محصور کر رکھا ہے۔




        

تازہ ترین خبریں


سائیبر سکیورٹی

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔