تازہ ترین
پاک دفاع
وزیراعظم عمران خان کا افغانستان میں امن واستحکام کیلئے پاکستان کی مسلسل حمایت کا اعادہ
سرینگر میں بھی فوج نے 3 بے گناہ نوجوانوں کو شہید کیا، پولیس کی گواہی آگئی
بھارتی ذرائع ابلاغ پاکستان کیخلاف منفی اور بے بنیاد پراپیگنڈا سے باز رہیں وزیراعظم
افغانستان آپریشن، دھماکے ،17جنگجوؤں سمیت 20افراد ہلاک،14باغی گرفتار
2 امریکی بحری جہازوں کی آمد آبنائے تائیوان میں امن کیلئے نقصان دہ چین
آرمی چیف کی سانحہ ٔمچھ کے لواحقین سے ملاقات،انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی
  14  جنوری‬‮  2021
کوئٹہ: آرمی چیف جنرل قمرجاویدباجوہ نے سانحہ مچھ کے لواحقین کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور اندوہ ناک سانحے کے ملزمان کو کٹہرے میں لایا جائے گا۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کوئٹہ پہنچے تو کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل سرفراز علی نے آرمی چیف کا استقبال کیا۔ اس موقعے پر آرمی چیف کو پاک افغان اور پاک ایران بارڈر مینجمنٹ سمیت صوبے میں درپیش سیکیورٹی چیلنجز پر بریفنگ دی گئی۔بعد ازاں آرمی چیف سے سانحہ مچھ کے لواحقین کی سدرن کمانڈ ہیڈ کوارٹرز کوئٹہ میں ملاقات ہوئی۔ آرمی چیف نے سانحہ مچھ کے لواحقین کو انصاف کی فراہمی کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ اندوہ ناک سانحے کے ملزمان کو کٹہرے میں لایا جائے گا۔انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں گے۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ افغان تنازعے کا کوئی فوجی حل نہیں، مذاکرات اور سیاسی تصفیہ ہی افغان تنازعے کا واحد حل ہے،افغانستان میں امن اور استحکام کا سب سے بڑا خواہشمند افغان عوام کے بعد پاکستان ہے ،پاکستان افغان امن عمل کی حمایت جاری رکھے گا۔منگل کو وزیراعظم عمران خان سے حزبوحدت اسلامی افغانستان کے چیئرمین استادکریم خلیلی نے ملاقات کی۔ملاقات میں دونوں رہنمائوں کی طرف سے افغان امن عمل اور دو طرفہ تعلقات پر غور کیا گیا۔ اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان افغانستان کیساتھ تعلقات مضبوطکرناچاہتا ہے، افغانستان کے ساتھ تجارتی، معاشی اور عوام کی سطح پر تعلقات مضبوط کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ہمیشہ سے موقف ہے افغان تنازعے کا کوئی فوجی حل نہیں، مذاکرات اور سیاسی تصفیہ ہی افغان تنازعے کا واحد حل ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ افغانستان میں تنازعے کے باعث افغان عوام نے بہت تکالیف برداشت کیں، افغانستان میں امن اور استحکام کا سب سے بڑا خواہشمند افغان عوام کے بعد پاکستان ہے اور پاکستان افغان امن عمل کی حمایت جاری رکھے گا۔ دوسری جانب وزیر اعظم کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان ایمبیسڈر صادق خان نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور افغان حزب وحد ت اسلامی کے سربراہ محمد کریم خلیلی کی ملاقات کے حوالے سے بتایا ہے کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے حزب وحدت اسلامی کے سربراہ استاد محمد کریم خلیلی اور ان کے وفد کا استقبال کیا،وزیر خارجہ نے پرامن، معتدل اور خوشحال افغانستان کے لیے پاکستان کی حمایت کے تسلسْل کی تجدید کی۔ایمبیسڈر صادق خان کے مطابق وزیر خارجہ نے واضح کیا کہ پاکستاناور افغانستان کے عوام مذہب،تاریخ،ثقافت اور روایات کے بندھن سے باہم منسلک ہیں،وزیر خارجہ نے باہمی تعلقات میں مذید استحکام کے لیے پاکستان کے عزم کی تجدید کی، انہوں نے باہمی تعلقات کو مظبوط بنانے کے لیے پاکستان کے متعدد اقدامات کو اجاگر کیا۔اپنے ٹویٹ میں ایمبیسڈر صادق خان نے بتایا کہ وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نےہمیشہ زور دیا ہے کہ افغان تنازع کا کوئی عسکری حل نہیں ہے،افغانستان تنازع کا بات چیت کے زریعہ حل ہی پیش رفت کا واحد راستہ ہے۔ نمائندہ خصوصی برائے افغانستان نے بتایا کہ وزیر خارجہ نے افغانوں کے زریعہ افغانوں کے لیے ایک تفصیلی کثیر الجہتی حل پر زور دیا۔وزیر خارجہ نے افغان امن عمل میں اب تاریخی کامیابیوں کےحصول میں پاکستان کے مثبت کردار کو اجاگر کیا،انہوں نے پاکستان کے افغان امن عمل میں سہولت کاری جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔محمد صادق خان کے مطابق وزیر خارجہ نے زور دیا کہ افغان قیادت کو پائیدار امن کے حصول کے لیے اس تاریخی موقع کو ضائع نہیں ہونے دینا چاہیے،وزیر خارجہ نے پاکستان کی طرف سے تمام فریقین پر تشدد میں کمی کے زریعہ جنگ بندی کی طرف پیشرفت کرنے کے مطالبے کو دہرایا۔شاہ محمود نےافغانستان کے اندر اور باہر موجود امن عمل کے دشمنوں کے کردار پر تنبیہہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ امن دشمن خطے اور افغانستان میں امن کو لوٹتے نہیں دیکھنا چاہتے۔ایمبیسڈر محمد صادق خان نے بتایا کہ استاد کریم خلیلی نے بالخصوص امن عمل اور لاکھوں افغان مہاجرین کی میزبانی میں پاکستان کی مسلسل حمایت پر شکریہ ادا کیا،استاد کریم خلیلی نے نئی ویزا پالیسی کے زریعہ افغان باشندوں کو سہولت فراہم کرنے اور باہمی تجارت کو استحکام دینے کے حوالے سے پاکستان کے متعدد اقدامات کو سراہا۔
اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان کا دفاع کرنے کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں اس لئے بھارت ہم پر ہرگز حاوی نہیں ہوسکتا۔ ایکسپریس نیوز کے پروگرام ایکسپریسو سے خصوصی گفتگو کے دوران شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت پاکستان میں دہشت گردوں کی پشت پناہی کر رہا ہے، بھارت ہم پر ہرگز حاوی نہیں ہو سکتا، پاکستان کا دفاع کرنے کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں، بھارت چاہتا تھا کہ وہ افغانستان میں اسٹیک ہولڈر بن جائے لیکن اسے ناکامی ہوئی،اب وہ افغانستان میں امن خراب کر رہا ہے۔ ہم نے عالمی برادری سے ڈوزیئر شیئر کیا ہے جس میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کرنے کی کوشش کی ہے.امریکا میں انتقال اقتدار اور پاکستان پر اس کے اثرات پر وزیر خارجہ نے کہا کہ ریاستی تعلقات میں ہمیشہ مفادات مقدم ہوتے ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ کا اپنا ایک منفرد انداز تھا، وہ ٹویٹس سے اظہار کرتے تھے لیکن نئی امریکی حکومت کا انداز مختلف ہو گا،نو منتخب صدر جو بائیڈن خارجہ امور پر خاصی مہارت رکھتے ہیں، وہ پاکستان اور خطے سے پوری طرح واقف ہیں، وہ یہاں بہت سے افراد کو جانتے ہیں، ہم بھی ان کی سوچ کو سمجھتے ہیں۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم مثبت نہیں ایک منفی اتحاد ہے، ان کا مقصد صرف منتخب حکومت کو گھر بھیجنا ہے، وہ عمران خان کو زک پہنچا نا اور اداروں پر دباؤ پر ڈال کر این آراو حاصل کرنا چاہتے ہیں ، استعفوں کے معاملے پر پی ڈی ایم میں یکسوئی نہیں، لانگ مارچ پر بھی ابھی تک کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہوا، یہ تاخیر اس لیے ہو رہی ہے کہ ان میں ابھی تک اتفاق نہیں، 31 جنوری کی ڈیڈ لائن کے بعد وہ فیصلے کریں گے۔
کراچی: سندھ پولیس کے اسپیشل سیکیورٹی یونٹ میں کانسٹیبل،لیڈی کانسٹیبل اور ڈرائیور کانسٹیبل کی بھرتی کا آغاز کردیا گیا ہے۔ترجمان اسپیشل سیکیورٹی یونٹ کے مطابق سندھ پولیس کے اسپیشل سیکیورٹی یونٹ میں کانسٹیبل، لیڈی کانسٹیبل اور ڈرائیور کانسٹیبل کی بھرتیوں کاعمل شروع کردیا گیا ہے جس کے تحت کراچی، حیدرآباداور سکھر ریجن کے اہل امیدواروں سے درخواستیں طلب کرلی گئی ہیں۔اسپیشل سیکیورٹی یونٹ کے کمانڈنٹ ڈاکٹر فرخ علی اور ڈی آئی جی سیکیورٹی اینڈ ایمرجنسی سروسز ڈویژن مقصود احمد نے یونٹ میں بھرتی کے سلسلے میں روایتی میرٹ اور شفافیت کو اپنی اولین ترجیح قرار دیا ہے۔ بھرتیوں کے لیے فزیکل، تحریری اور رجحان ٹیسٹ پاکستان ٹیسٹنگ سروس (پی ٹی ایس) کے زیراہتمام منعقد کیے جائیں گے، درخواستیں جمع کرانے کی آخری تاریخ 25 جنوری 2021 ہے۔ بھرتیوں کے لیے حیدرآباد ریجن کی 924، سکھرریجن کی 717 جبکہ کراچی ریجن کی 358 اسامیاں ہیں جنہیں ڈسٹرکٹ کی سطح پر بھرتی کیا جائے گا جس میں اقلیتی کوٹہ بھی مختص کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ ایس ایس یو میں پچھلی مرتبہ 1300 کمانڈوزکی اسامیوں کے لیے 150,000 سے زائد امیدواروں نے درخواستیں جمع کرائی تھیں۔


ہتھیار
        

تازہ ترین ویڈیو
پاک دفاع
سپیشل رپورٹس
پاک دفاع
سپیشل رپورٹس


تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔