تازہ ترین
سپیشل رپورٹس
آسٹریلیا افغانستان میں جنگی جرائم پر معافی مانگے چین کا مطالبہ
خوفزدہ بھارت نے لداخ کی پینگ گانگ جھیل پر میرین کمانڈوز تعینات کردیئے
افغانستان جھڑپیں بمباری، بریگیڈئیر،ضلعی پولیس، چیف کمانڈر حمزہ وزیر ستانی سمیت 19 ہلاک
پاکستان ،چین ساتھ کھڑے ، آئندہ چیلنجز سے بھی تعلقات پر فرق نہیں پڑیگا آرمی چیف
پروازوں کو سعودی حدود سے گزرنے کی اجازت مل گئی اسرائیلی میڈیا
جوبائیڈن نے ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کو پھر سے بحال کرنے کا اشارہ دیدیا
  3  دسمبر‬‮  2020
امریکا کے نومنتخب صدر جوبائیڈن نے ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کو پھر سے بحال کرنے کا اشارہ دے دیا۔ غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکا کے نومنتخب صدر جوبائیڈن نے ٹی وی انٹرویو میں کہا کہ ان کی مدت میں اگر ایران ایٹمی معاہدے پر سختی سے عملدرآمد کرنے کو تیار ہوتا ہے تو امریکا دوبارہ سے ایٹمی پروگرام بحال کردے گا۔ جوبائیڈن نے شرط رکھی ہے کہ اس کے لیے ایران کو جوہری مواد کی ذخیرہ اندوزی کی سرگرمیوں کو چھوڑ کر معاہدے پر عمل کرنا ہوگا۔ بائیڈن کے مطابق اگر ایران ایٹم بم بنا لیتا ہے تو سعودی عرب، ترکی، مصر اور دیگر ممالک پر ایٹیمی ہتھیار حاصل کرنے کا شدید دباؤ قائم ہو جائے گا۔رپورٹ کے مطابق بائیڈن سے جب پوچھا گیا کہ کیا وہ ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنے خیالات پر قائم رہیں گے تو انہوں نے کہا کہ یہ مشکل ہے لیکن کوشش کی جائے گی۔ دوسری جانب ایران کا کہنا ہے کہ امریکا کو آگے کی بات چیت سے قبل اپنے بین الاقوامی وعدوں پر عمل کرنا ہوگا۔ واضح رہے کہ صدارتی مہم کے دوران بھی امریکی نومنتخب صدر جوبائیڈن نے ایران کے ساتھ معاہدے کو پھر سے بحال کرنے کی بات کی تھی۔ خیال رہے کہ ایران نے 2015 میں امریکا، چین، فرانس، جرمنی، روس اور برطانیہ کے ساتھ جے سی پی او اے پر دستخط کیے تھے۔ اس میں کہا گیا تھا کہ ایران اپنے جوہری پروگرام کو واپس لے لے گا اور پابندیوں میں نرمی کے عوض اپنے یورونیم ذخیرے میں بھی کافی کمی کرے گا۔سن 2018 میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے جوہری معاہدے کو ختم کردیا تھا اور اس کے بعد یہ معاہدہ کالعدم سمجھا جانے لگا تھا۔

پاکستان اور چین کی افواج کے درمیان دفاعی شعبہ میں تعاون کو فروغ دینے کیلئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے گئے ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق چین کے وزیر برائے قومی دفاع جنرل وی فینگ کے گزشتہ روز دورہ جی ایچ کیو کے موقع پر یہ دستخط ہوئے۔ بیان میں بتایا گیا ہے کہ مہمان وزیر دفاع نے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے جی ایچ کیو میں ملاقات کی۔ دوران ملاقات باہمی دلچسپی کے امور‘ علاقائی سلامتی کی صورتحال اور دفاعی تعاون میں اضافہ جیسے موضوعات پر تبادلہ خیالات کیا گیا۔ مہمان وزیر دفاع نے علاقائی سلامتی اور سی پیک کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے پاک فوج کی مخلصانہ کوششوں اور کردار کو تسلیم کیا اور ان کی تعریف کی۔ چیف آف آرمی سٹاف نے تمام علاقائی اور عالمی فورموں پر کلیدی ایشوز کے حوالے سے پاکستان کیلئے چین کی غیر متزلزل حمایت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاک فوج چین کے ساتھ برادرانہ اور ہر آزمائش پر پورا اترنے والے تعلقات کو نہایت قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ہم ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے رہے ہیں اور آئندہ چیلنجوں کے دوران بھی ہمارے تعلقات میں کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ بعد ازاں دونوں ملکوں کی بری افواج کے درمیان دفاعی تعاون میں اضافہ کیلئے ایم او یو پر دستخط کئے گئے۔ قبل ازیں جی ایچ کیو آمد پر چینی وزیر دفاع نے یادگار شہداء پر پھولوں کی چادر چڑھائی۔ اس موقع پر انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ جنرل وی فینگ نے گزشتہ روز چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل ندیم رضا سے بھی ملاقات کی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق بدلتے ہوئے جیو سٹرٹیجک منظر نامہ اور دونوں ملکوں کے درمیان دفاع و سلامتی کے شعبوں میں تعاون بڑھانے کے موضوعات پر تبادلہ خیالات کیا گیا۔ طرفین نے مستقبل اور سلامتی کے مشترکہ ویژن کے لئے دونوں ملکوں کے درمیان مزید گہرے سٹرٹیجک تعاون کی خاطر آہنی بھائی چارے اور سدا بہار دوستی کے عزم کا اعادہ کیا۔
پاک فوج میں اعلی سطحی ترقیوں کے ساتھ ساتھ بڑے پیمانے پر تقرریاں اور تبادلے، کراچی، لاہور، ملتان، بہاولپور، کوئٹہ کے کور کمانڈرز سمیت سٹریٹجک فورس کے کمانڈر تبدیل۔ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کےمطابق پاک فوج میں اعلیٰ سطح پر ترقیوں سمیت نئی تقرریاں اور تبادلے کئے گئے ہیں، جس کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل ماجد احسان کو انسپکٹر جنرل آرمز، لیفٹیننٹ جنرل سید محمد عدنان کو آئی جی ٹریننگ، لیفٹیننٹ جنرل حسن اظہرحیات ملٹری سیکریٹری، لیفٹیننٹ جنرل آصف غفور کو آئی جی کمیونیکیشن اینڈ آئی ٹی مقرر کردیا گیا ہے، ڈیجی آئی ایس پی آر کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل محمد عبدالعزیز کور کمانڈر لاہور، لیفٹیننٹ جنرل محمد وسیم اشرف کور کمانڈر ملتان، لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم کور کمانڈر کراچی، لیفٹیننٹ جنرل خالد ضیاء کور کمانڈر بہاولپور، لیفٹیننٹ جنرل سرفراز علی کمانڈر سدرن کمانڈ کوئٹہ اور لیفٹیننٹ جنرل محمد علی کو کمانڈر آرمی سٹریجک فورس کمانڈ متعین کردیا گیا ہے۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وفد کے ہمراہ افغان ہم منصب حنیف آتمر کے ساتھ ملاقات کی،جس میںدوطرفہ تعلقات ،خطے میںامن وامان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ افغان وزیرخارجہ نے افغانستان آمد پر وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کو خوش آمدید کہا جبکہ وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود نے پرتپاک خیر مقدم پر افغان ہم منصب کا شکریہ ادا کیا، مشیر تجارت رزاق دائود اور سیکرٹری خارجہ سہیل محمود بھی ملاقات میں موجود تھے ۔شاہ محمود قریشی نے اس موقع پر کہا کہ پاکستان اورافغانستان کے مابین گہرے دیرینہ تہذیبی اور تاریخی برادرانہ تعلقات ہیں، وزیراعظم عمران خان کا موقف رہا ہے کہ افغان مسئلے کو طاقت کے ذریعے حل نہیں کیا جا سکتا۔ پاکستان دیرپا اور مستقل امن کیلئے افغان قیادت میں افغانوں کو قابلِ قبول مذاکرات کا حامی رہا ہے، خطے کا امن و استحکام، افغانستان میں قیام امن سے مشروط ہے۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں دیرپا اور مستقل قیام امن کیلئے بین الافغان مذاکرات کا کامیابی سے ہمکنار ہونا ناگزیر ہے، پاکستان افغان مہاجرین کی باوقار وطن واپسی کا متمنی ہے، پاکستان، افغانستان سمیت خطے میں امن و استحکام کیلئے اپنی مخلصانہ کاوشیں جاری رکھنے کیلئے پرعزم ہے۔

دہشت گردی
  26  ‬‮نومبر‬‮  2020
جرمنی: وزارت اعظمیٰ کی عمارت پر حملہ

ہتھیار
        

تازہ ترین ویڈیو
سپیشل رپورٹس
علاقے
علاقے
پاک دفاع


تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ دفاع ٹائمز محفوظ ہیں۔